وزیراعظم عمران خان نے متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) پاکستان کے کنوینر خالد مقبول صدیقی سے رابطہ کیا ہے۔ گزشتہ روز وفاقی حکومت میں شامل متحدہ قومی موومنٹ کے کنوینر ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی نے کراچی سے متعلق وعدے پورا نہ کرنے پر وزرات چھوڑنے اور کابینہ سے نکلنے کا اعلان کیا تھا۔ ایم کیو ایم کے اعلان کے بعد حکمران جماعت تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی دوڑیں لگ گئیں تھیں اور وزیراعظم عمران خان کی جانب سے ان کے تحفظات دور کرنے کی یقین دہانی کرائی گئی تھی۔ ایم کیوایم کو منانے کے لیے وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اسد عمر کی قیادت میں وفد کراچی میں موجود ہے تاہم اب وزیراعظم عمران خان نے خود خالد مقبول صدیقی سے رابطہ کیا ہے۔ ذرائع کے مطابق وزیر اعظم کی جانب سے رابطہ کرنے پر خالد مقبول صدیقی نے اپنے تحفظات ان کے سامنے رکھے۔ ذرائع نے بتایا کہ وزیراعظم نے ایم کیو ایم کنوینر کو ملاقات کے لیے اسلام آباد بلا لیا ہے۔ وزیراعظم عمران خان کا خالد مقبول سے کہنا تھا کہ آپ کے تمام جائز مطالبات پورے ہوں گے اور تمام تحفظات دور کریں گے، ایم کیو ایم حکومتی اتحاد میں رہے گی۔ ذرائع کے مطابق جہانگیر ترین نے بھی خالد مقبول صدیقی سے رابطہ کیا جس کے بعد تحریک انصاف اور ایم کیو ایم وفد کے درمیان ملاقات جلد ہوگی۔ خیال رہے کہ قومی اسمبلی میں ایم کیو ایم کے ارکان کی تعداد 7 ہے جبکہ سینیٹ میں 5 ممبر ہیں۔ ایم کیو ایم کے پاس وفاقی کابینہ میں 2 وزراتیں ہیں جن میں خالد مقبول صدیقی وزرات انفارمیشن ٹیکنالوجی اور سینیٹر فروغ نسیم وفاقی وزیر قانون ہیں۔ https://urdu.geo.tv/latest/212120-